اگر آپ سمجھیں تو احتیاط میں ہی نجات ہے

بہت رش تھا، میں بیمار بھی ہوں، کھانستی ہوں تو ایسا لگتا ہے کہ سینہ اور پھیپڑے پھٹ جائیں گے۔ بڑی مشکل سے ان کے گھر گئی ۔

وہاں تو ایسا رش تھا جیسے شادی کی تقریب ہو۔ کمبخت شناختی کارڈ بھی بھول آ ئی ہوں۔۔۔ ماں جی اس گھر کا حال سنا رہی تھی جہاں پر مزدور، غریب اور مساکین کی لسٹیں تیار ہورہی تھیں۔ صاحب اقتدار و اختیار کی ہدایات پر عمل توکیا جارہا تھا لیکن احتیاطی تدابیر شاید نیک نامی اور جنت ٹھکانا بنانے کی حسرت و لالچ نے بھلا دیئے تھے۔ پتہ نہیں۔ ہم ہمالیہ کو موم بتی کے ساتھ پگھلانے کا سلسلہ کب بند کریں گے۔

میرا خیال ہے ہم غفلت اور بے حسی کے اس دور میں داخل ہو چکے ہیں جس میں انسان اللہ کے خوف جیسی نعمت سے بھی محروم ہو جاتا ہے۔ جس میں انسان اور پتھر میں کوئی فرق نہیں رہتا۔
جی ہاں! کورونا وائرس کی وباء پھیلنے کا سدباب قانون کے ڈنڈے کے ہی زور پر کیا جارہا ہے۔ ہم میں سے احساس اور رجوع کرنے کا مادہ دم توڑ چکا ہے۔جو لوگ آگاہی مہم کا ٹھیکہ لیے ہوئے ہیں ان کے مہم میں آ گاہی کم اور خودنمائی زیادہ ہوتی ہے۔

آ پ کوایک ہی تصویر میں احساس برتری اور احساس کمتری ایک ساتھ دیکھنے کو ملیں گے۔ دینے والا سرخرو لینے والا احسان کے بوجھ تلے دبا ہوا۔ آ پ کے علم میں ہونا چاہیے کہ‏ مردان کا رہائشی عمرہ سے واپس آیا، کرونا کی علامات ہونے کے باوجود وہ گھر چلا گیا اور اہل علاقہ کے اکرام میں دعوت عام کا اہتمام کیاکچھ دن بعد وہ انتقال کر گیا لیکن جن کو دعوت پر بلایا تھا انکی زندگیاں تباہ کر گیا، اس علاقے سے 46 لوگوں کا ٹیسٹ ہوا جن میں 39 لوگوں میں کرونا وائرس پایا گیا۔

جس کے بعد پوری یونین کونسل کو سیل کردیا گیا۔ خدارا اپنے اپنے گھروں میں رہیں ۔ملک کے معاشی حالات آپکے سامنے ہیں۔ پاکستان کی حکومت اسکو ڈیل نہیں کر سکتی اگر خدانخواستہ اٹلی جیسی صورتحال پیدا ہوئی تو ہمارے پاس پورے ملک میں صرف دوہزار وینٹیلیٹرز ہیں۔ اپنےہنستے بستے گھرانے اور اس ملک کا خیال رکھیں۔

اپنے اپنے گھروں میں رہیں۔ کیونکہ احتیاط میں ہی نجات ہے

ٹیگز

عبداللہ خان حیدر

عبداللہ خان حیدر ایک منجھے ہوئے سینئر صحافی ہیں مختلف قومی اخبارات کے ساتھ کام کر چکے ہیں۔ گذشتہ کئی سالوں سے بے باک آواز کے ساتھ بطور چیف رپورٹر منسلک ہیں۔ ان سے ذیل وٹس ایپ نمبر کے ذریعے رابطہ کیا جا سکتا ہے 0334-8270837

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
error: Content is protected !!
Close