جنوبی وزیرستان میں لشمینیا نے تباہی مچا دی، حکومت نے آنکھیں پھیر لیں

وانا(نامہ نگار) ضلع جنوبی وزیرستان میں لیشمنیا مچھر نے تباہی مچادی،محکمہ صحت کا فوکس صرٖف کوروناء وائرس پر ہے


گزشتہ پانچ سالوں سے ضلع جنوبی ویرستان کے مختلف تحصیلوں برمل،توئے خلہ،شکئی،سراروغہ،خڑپل اور تیارزہ میں لیشمنیامچھر سے متاثرہ افراد کی تعدادمیں روزبروز اضافہ ہوتاجارہاہے سابقہ کونسلرعلی محمد وزیر نے کہاکہ پچھلے سال صرف ضلعی ہیڈکوارٹر وانا میں چار ہزار افراد لیشمنیا مرض میں مبتلا تھے اور اسطرح جنوبی وزیرستان کے دیگر تحصیلوں میں بھی سینکڑوں کی تعداد میں مرد وخواتین لیشمنیامچھر سے متاثرہوگئے ہیں اس سال کوروناء وائرس کے خدشات کے پیش نظر محکمہ صحت نے باقی سارے امراض کو کھلی چھٹی دیدی گئی ہے جو عوام کے ساتھ ظلم کے مترادف ہے۔


ضلعی انتظامیہ کے ناک تلے ایجنسی سرجن کے دفترمیں پچھلے اٹھ سال مچھردانیوں کا خرید وفروخت ہورہی ہے اور عوام کے بجائے منظورنذر افراد میں تقسیم کررہے ہیں کوئی پرسان حال نہیں۔

انھوں نے کہاکہ اللہ نور محسود نے صحت کے مد میں میرٹ کی دھجیاں اڑا دی گئی ہے جس نے محکمہ ہیلتھ میں اے ٹو زیڈ اپنافیملی کو بھرتی کیاہے پھر بھی پوچھنے والا کوئی نہیں،علی محمد وزیر نے وزیراعلیٰ خیبر پختون خواہ کے گورنر،محکمہ صحت اور ایم پی ایز،ایم این ایز صاحبان سے مطالبہ کیاکہ مذکورہ مرض اور مچھردانیوں کے خلاف قانونی کاروائی کریں ورنہ عیدالفطرکے بعد محکمہ ہیلتھ اور مقامی ضلعی انتظامیہ کے خلاف احتجاجی مظاہرے کرینگے۔

ٹیگز

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
error: Content is protected !!
Close