غیرت کے نام پر لڑکیوں کے قتل کا معاملہ، تحقیقاتی ٹیم تشکیل دیدی گئی

میرانشاہ

ریجنل پولیس آفیس بنوں نے شمالی وزیرستان میں دو جواں سالہ لڑکیوں کو غیرت کے نام پر قتل کرنے کے واقعے کے خلاف ایکشن لیتے ہوئے مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دیدی ہے۔

قتل کی جانے والی دونوں لڑکیوں کی قابل اعتراض ویڈیو بنانے کے بعد ملزمان نے اسے انٹرنیٹ پر پھیلا دیا تھا۔

شمالی وزیرستان کے ضلعی پولیس سربراہ شفیع اللہ گنڈاپور کمیٹی کے سربراہ ہوں گے جبکہ ڈی ایس پی شاہد عدنان، سب انسپکٹر میر صاحب خان، محمد نواز اور اسسٹنٹ سب انسپکٹر فرمان علی کمیٹی کے ارکان ہوں گے۔

بعد ازاں ڈی پی او گنڈا پور نے اپنے دفتر میں میڈیا کے نمائندوں کو بتایا کہ پولیس نے چار افراد کو گرفتار کر لیا ہے جن میں ایک لڑکی کا والد اور رشتہ دار سمیت مبینہ طور پر لڑکیوں کی ویڈیو بنانے والے عمر ایاز اور ویڈیو انٹرنیٹ پر پھیلانے والا فدا محمد بھی شامل ہے جوکہ ملزم عمر ایاز کا قریبی ساتھی بتایا جا رہا ہے۔

ڈی پی او نے مزید بتایا کہ لڑکیوں کو قتل کرنے والا مبینہ ملزم محمد اسلم روپوش ہونے میں کامیاب ہو گیا ہے جس کی تلاش جاری ہے۔

ڈی پی او کے مطابق ایف آئی اے کی سائبر برانچ سے ویڈیو انٹرنیٹ سے ہٹانے کے لیے رابطہ کیا گیا ہے، جو کہ مختلف ویب سائٹس پر اپ لوڈ کی گئی ہے۔

ڈی پی او نے بتایا کہ مرکزی ملزم عمر ایاز کی بیوی کو بھی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے تاہم خاندان والوں نے اسے بچا لیا ہے کیوں کہ اسے ویڈیو میں کسی قابل اعتراض حرکت کرتے ہوئے نہیں دیکھا جا سکتا۔

انہوں نے کہا کہ یہ کیس پولیس کے لیے ایک چیلنج تھا کیوں کہ قتل کی جانے والی لڑکیوں کے خاندان والے اس واقعے کو چھپانا چاہتے تھے اور کسی نے پولیس سے رابطہ نہیں کیا اس لیے مقدمہ بھی ایس ایچ او کی مدیعت میں درج کیا گیا ہے۔ تاہم قتل کی جانے والی لڑکیوں کے خاندان والوں نے اتنا ہی بتایا ہے کہ ویڈیو لگ بھگ ایک سال بنائی گئی تھی۔

یاد رہے کہ شمالی وزیرستان سے تعلق رکھنے والی دو لڑکیوں جن کی عمریں بالترتیب سولہ اور اٹھارہ سال بتائی جا رہی ہیں، کی قابل اعتراض حرکات پر مبنی ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد انہیں چودہ مئی کو قتل کیا گیا تھا جس کا مقدمہ رزمک پولیس نے ایس ایچ او کی مدیعت میں درج کیا ہے۔

ٹیگز

ممتاز بنگش

بے باک آواز کے مدیر اعلیٰ ہیں کوہاٹ سمیت قبائلی اضلاع سے متعدد قومی اور بین الاقوامی نشریاتی اداروں کے ساتھ کام کر چکے ہیں

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close