کوہاٹ۔ کورونا سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 13 ہوگئی

کوہاٹ میں ایک مزید شخص میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے اس سے قبل تبلیغی جماعت کے 9 مزید افراد میں کورونا وائرس کے ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد ضلع میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 13 ہو گئی ہے۔

ڈویژنل ہیڈکوارٹر ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر رحیم خٹک نے نو مزید افراد میں وائرس کی موجودگی اور ٹیسٹ مثبت آنے کی تصدیق کی ہے۔

کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے نئے افراد کا تعلق بلوچستان کے ضلع مستونگ سے ہے جو کہ اپنے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ دین اسلام کی ترغیب کی خاطر درہ آدم خیل آئے ہوئے تھے۔

اس سے پہلے اسی جماعت کے دو افراد میں کورونا وائرس کے ٹیسٹ مثبت آئے تھے جنہیں کے ڈی اے ہسپتال یا ڈویژنل ہیڈکوارٹر ہسپتال انتظامیہ نے ٹیسٹ کے لیے نمونے لینے کے بعد واپس جماعت کے ساتھ رہنے کی اجازت دے دی تھی۔

سوشل میڈیا پر بھی مذکورہ ہسپتال انتظامیہ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے اور لوگ الزام لگا رہے ہیں کہ ہسپتال انتظامیہ کی غفلت کوہاٹ میں کورونا وائرس پھیلانے کا سبب بن رہی ہے۔

اس سے قبل بھی ہسپتال انتظامیہ کی غفلت کی خبریں سوشل میڈیا پر گردش کرتی رہی ہیں اور ان خبروں میں دعویٰ کیا جاتا رہا ہے کہ کورونا کے مشتبہ مریضوں کو آئسولیشن وارڈ کے باہر گھومنے پھرنے دیا جا رہا ہے۔

ہسپتال ذرائع نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ کورونا وائرس کے مریضوں کی نگہداشت کے لیے انہیں کسی قسم کی تربیت نہیں دی گئی اور نہ ہی انہیں مناسب وسائل دیئے گئے ہیں یہی وجہ ہے کہ اسی ہسپتال کی ایک نرس میں کورونا وائرس کی علامات ظاہر ہونے پر اس کے نمونے بھی لیبارٹری بھیجے گئے ہیں۔

یاد رہے کہ ابھی تک کوہاٹ سے کورونا وائرس کے 44 مشتبہ افراد کے نمونے لیبارٹری بھجوائے گئے جن سے 22 افراد کے نمونے منفی اور 13 افراد کے نمونے مثبت آئے ہیں جن میں ایک کا تعلق چمبئی اور دوسرے 63 سالہ شخص شامل ہیں۔

جبکہ 9 افراد سے لیے گئے نمونوں کے نتائج ابھی آنا باقی ہیں جن میں سے دو اہم شخصیات بھی شامل ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
error: Content is protected !!
Close