کوہاٹ فائرنگ واقعہ، ڈویژن بھر میں سیکورٹی ہائی الرٹ

کوہاٹ میں گذشتہ روز دکان کے اندر دو افراد کے قتل کیے جانے کے بعد کوہاٹ اور ہنگو میں حفاظتی انتظامات سخت کردیئے گئے ہیں

ہنگو روڈ کو عارضی طور پر ٹریفک کے لیے بلاک کر دیا گیا ہے اور بعض لوگ کوہاٹ یا پشاور تک پہنچنے کے لیے سماری روڈ کا استعمال کرنے پر مجبور ہوئے ہیں۔

اس حوالے سے ڈی آئی جی طیب حفیظ چیمہ کے دفتر سے جاری ہونے والی ایک پریس ریلیز میں انہوں نے کہا ہے کہ کسی کو بھی علاقے کا امن خراب کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔

انہوں نے کہا ہے کہ شہر کے مختلف مقامات پر لگائے گئے سی سی ٹی وی کیمروں کی مدد سے بہت جلد واقعے میں ملوث ملزمان کو گرفتار کر لیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:کوہاٹ میں دو افراد قتل، شہر کے سارے بازار بند

دریں اثناء ہنگو کے عمائدین نے بھی مطالبہ کیا ہے کہ بعض لوگ علاقے کا امن خراب کرنا چاہتے ہیں لہٰذا حکومت جلد از جلد اس سازش کے پیچھے چھپے محرکات کو بے نقاب کرے اور ملزمان کو گرفتار کیا جائے۔

پشتو ٹی وی چینل خیبر نیوز کی ایک رپورٹ کے مطابق ہنگو میں سنی سپریم کونسل کے امیر مولانا عبدالستار نے کہا ہے کہ علاقے کا امن ہرگز خراب نہیں کرنے دیں گے۔

یاد رہے کہ ستمبر کی پندرہ تاریخ کو دوپہر کے قریب نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے فائرنگ کرکے پشاور چوک کے قریب میڈیسن کی دکان میں دو افراد کو قتل کر دیا تھا۔

جس کے بعد لواحقین نے لاشیں پشاور چوک میں رکھ کر احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرین ملزمان کی گرفتاری کا مطالبہ کر رہے تھے۔

یہ بھی پڑھیں:کوہاٹ فائرنگ واقعہ، پولیس کا بیان سامنے آگیا ہے

اسی دوران بعض نامعلوم افراد نے کمیٹی چوک کے قریب ایک مسجد کے سامنے فائرنگ کر دی جس سے شہر بھر میں بھگدڑ مچ گئی اور دکانداروں نے شہر کی تمام دکانیں بند کردیں۔

نمازیوں اور دکانداروں نے مسجد کے سامنے فائرنگ کے خلاف کمیٹی چوک میں احتجاج کیا اور سڑک کو ٹریفک کے لیے بلاک کر دیا۔ مظاہرین دکانداروں اور نمازیوں کو تحفظ دینے کا مطالبہ کر رہے تھے۔

یاد رہے کہ کوہاٹ واقعے میں دو افراد کے قتل سے ایک دن قبل ہنگو کے علاقہ محمد خواجہ کے ایک رہائشی کو جوزارہ کے قریب نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے قتل کر دیا تھا۔

پولیس کے مطابق دونوں واقعات میں مقتولین کی کسی کے ساتھ ذاتی دشمنی نہیں ہے اور ایف آئی آر میں دہشت گردی کی دفعات شامل کرکے نامعلوم ملزمان کی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔

ٹیگز

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
error: Content is protected !!
Close