صوبائی حکومت نے یوم علی کے جلوسوں پر پابندی عائد کر دی

پشاور: کورونا وائرس خدشات محکمہ ریلیف خیبر پختونخوا نے یوم علی کے تمام جلوسوں پر پابندی عائد کرنے کا اعلامیہ جاری کر دیا

اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ کورونا وائرس ایمرجنسی حالات کے باعث صوبائی حکومت پہلے ہی 31 مارچ کو ایک اعلامیہ جاری کر چکی ہے جس کے مطابق ہر قسم کے قومی و مذہبی اجتماعات پر پابندی عائد کی گئی ہے۔

تاہم دوبارہ اعلامیہ اس بات کی وضاحت کے لیے جاری کیا جا رہا ہے کہ کسی کو بھی کسی قسم کے اجتماعات کی اجازت نہیں ہوگی خواہ وہ اجتماعات کسی بھی نوعیت کے ہوں۔

اعلامیہ میں اس بات کی وضاحت بھی کی گئی ہے کہ اس دوران یوم علی کے حوالے سے کسی بھی قسم کے جلوس کی اجازت نہیں ہوگی اور تمام تر مجالس امام بارگاہوں کے اندر سماجی فاصلہ رکھتے ہوئے منعقد کی جائیں گی۔
دوسری جانب وفاقی وزارت داخلہ نے ملک بھر میں سیکیورٹی اداروں کے دفاتر، اہم تنصیبات ، سرکاری دفاع اور اجتماعات پر حملوں کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔

وزارت داخلہ نے چاروں صوبوں کے چیف سیکرٹریوں کو مراسلہ جاری کرتے ہوئے الرٹ رہنے کی ہدایات جاری کی ہیں۔

مراسلے میں کہا گیا ہے کہ دہشت گرد اور ملک دشمن عناصر ذیادہ سے زیادہ جانی نقصان پہنچانے کی سازش کر رہے ہیں۔
مراسلے میں کہا گیا ہے کہ دہشت گرد خودکش حملوں، بارودی مواد یا ریموٹ کنٹرول بموں کے ذریعے لوگوں کو نشانہ بنا سکتے پیں

یاد رہے بلوچستان اور خیبر پختونخواہ میں دہشت گردی ک واقعات رونما ہو چکے ہیں۔
اسی طرح اففانستان میں خود کش حملے اور دہشت گردی کے واقعات میں درجنوں افراد ہلاک کیے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ ہر سال اکیس رمضان کو یوم علی عقیدت و احترام سے منایا جاتا ہے اور اس نسبت سے ملک کے مختلف علاقوں میں چھوٹے بڑے جلوس نکالے جاتے ہیں اور امام بارگاہوں میں مجالس کا انعقاد کیا جاتا ہے۔

ٹیگز

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
error: Content is protected !!
Close