افغانستان کرکٹ ٹیم کے بلے باز شفیق اللہ شفق پر چھ سال کی پابندی عائد

افغانستان کرکٹ بورڈ نے قومی کرکٹ ٹیم کے وکٹ کیپر اور بلے باز شفیق اللہ شفق کے کرکٹ کھیلنے پر چھ سال کی پابندی عائد کی ہے۔

افغانسان کرکٹ بورڈ نے اتوار کے روز بتایا ہے افغانستان کرکٹ ٹیم کے وکٹ کیپر اور بلے باز شفیق اللہ شفق کو اینتی کرپشن کوڈ کی خلاف ورزی کے چار الزامات قبول کرنے کے بعد چھ سال کی پابندی کا سامنا کرنا پڑے گا۔

بورڈ حکام کے مطابق یہ الزامات 2018 میں افغانستان پریمیر لیگ (اے پی ایل) ٹی ٹوئنٹی کے پہلے ایڈیشن کے دوران ہونے والے جرائم سے متعلق ہیں جہاں وہ ننگرہار لیپرڈز کے لیے کھیلے تھے۔

اور سال 2019 میں بنگلہ دیش پریمیر لیگ (بی پی ایل) جہاں انہوں نے سلہٹ تھنڈر کی نمائندگی کی تھی۔تیس سالہ شفیق اللہ شفق نے سال 2009 میں اپنے کرکٹ کیریر کا آغاز کیا تھا جنہوں نے 24 ایک روزہ اور 46 ٹی ٹوئنٹی میچوں میں اپنے ملک کی نمائندگی کی تھی اب چھ سال تک کسی بھی فارمیٹ میں ملک کے لیے نہیں کھیل پائیں گے۔

افغانستان کرکٹ بورڈ کے ایک سینئر اینٹی کرپشن منیجر سید انور شاہ قریشی نے کہا ہے کہ قومی کرکٹ ٹیم کے سینئر کھلاڑی کا اس قسم کی بدعنوانی میں ملوث ہونا ایک سنگین جرم ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مذکورہ کھلاڑی نے بنگلہ دیش پریمیئر لیگ میں اپنے دیگر ساتھیوں کو بھی اپنے ساتھ ملانا چاہا لیکن وہ اس میں ناکام رہے۔

ٹیگز

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
error: Content is protected !!
Close