#covid19 کورونا وائرس۔ پاکستان لاک ڈاؤن کی جانب گامزن

<span class="fa fa-user"></span>
ممتاز بنگش
پاکستانکورونا وائرس
110
1

دنیا بھر میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد تین لاکھ سے تجاوز کر چکی ہے چین کے شہر ووہان سے پھیلنے والے وائرس کا شکار ہونے والے 14 ہزار سے زائد افراد موت کے منہ میں جا چکے ہیں۔

حکومت کی جانب سے جاری ہونے والی اعداد و شمار کے مطابق پاکستان میں ابھی تک 799 افراد میں وائرس کی تشخیص ہوئی ہے جن میں سے 6 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔

گذشتہ روز پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے اپنے خطاب میں لوگوں کو اپنے گھروں تک محدود رہنے کی ہدایت کی ہے

عمران خان نے اپنے خطاب میں کہا ہے کہ پاکستان میں 25 فیصد سے زیادہ لوگ غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزار رہے ہیں اگر ملک کو لاک ڈاؤن کیا گیا تو دیہاڑی کرنے والے لوگ روزی روٹی سے محروم ہو جائیں گے تاہم لوگوں کو چاہیئے کہ وہ اپنے آپ کو خود ساختہ قرنطین میں رکھیں اور غیر ضروری گھروں سے باہر نہ نکلیں۔

دوسری جانب نجی ٹی وی چینل جیوز نیوز کے اینکر شہزاد اقبال نے اپنے ایک پروگرام میں انکشاف کیا کہ اس وقت پاکستان میں صورتحال اٹلی سے کہیں زیادہ خطرناک ہے اس لیے شاید حکومت کے پاس لاک ڈاؤن کے علاوہ کوئی دوسرا چارہ نہ ہو اگر حکومت کا آخری آپشن لاک ڈاؤن ہے تو پھر ابھی سے اس پر غور کرنا چاہیے تاکہ خطرناک وائرس کو پھیلنے سے روکا جاسکے۔

یہ خبر بھی پڑھیں کرونا وائرس خطرناک، سندھ میں لاک ڈاؤن شروع

اگر چہ وزیراعظم لاک ڈاؤن کے حق میں نہیں لیکن خیبر پختونخوا کے علاوہ تمام صوبوں نے فوج طلب کر لی ہے جبکہ سندھ میں آج سے مکمل لاک ڈاؤن ہے اور خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جا رہی ہے۔

میڈیا کے علاوہ سیاسی طور پر بھی حکومت پر لاک ڈاؤن کے لیے دباؤ بڑھ رہا ہے عمران خان کی سابقہ اہلیہ ریحام خان نے بھی اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر ایک ویڈیو کے ذریعے حکومت کو کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے مکمل لاک ڈاؤن کا مشورہ دیا ہے

یاد رہے کہ توار کو  ملک میں کورونا وائرس کے 166 کیسز رپورٹ ہوئے جن میں سے پنجاب میں86، سندھ میں 60، گلگت بلتستان میں 16 اور بلوچستان میں 4 نئے کیس سامنے آئے جب کہ خیبرپختونخوا اور گلگت بلتستان میں ایک ایک ہلاکت ہوئی ہے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.