کوہاٹ: رہائی پانے والا شخص جیل گیٹ کے سامنے قتل

ملزمان اشفاق خان اور وقاص خان نے مبینہ طور پر افتخار احمد کوضمانت پر رہائی کے بعد جیل کے سامنے فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ اتار دیا
کوئیک رسپانس فورس کی ٹیم نے ایچ سی تنویر عاصی کی قیادت میںملزمان کا پیچھا کیا جنہیں اسلحہ سمیت ڈرامائی انداز میں گرفتار کر لیا گیا، پولیس

کوہاٹ(سٹاف رپورٹر)کوہاٹ جیل سے رہا ہونیوالے قیدی کو مخالفین نے فائرنگ کرکے قتل کردیا۔پولیس نے بروقت کاروائی کرکے واردات میں ملوث دو ملزمان کو آلہ قتل سمیت گرفتار کرلیا ہے۔ملزمان اشفاق خان اور وقاص خان نے افتخار احمد کوضمانت پر رہائی کے بعد جیل کے سامنے فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ اتار دیا۔واقعہ سابقہ دشمنی کا شاخسانہ ہے ۔مقتول نے کچھ ماہ قبل ملزمان کے رشتہ دار کو قتل کیا تھا۔واقعے کا مقدمہ تھانہ جرما میں گرفتار ملزمان کے خلاف درج کرلیا گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق کوہاٹ جیل سے رہا یافتہ قیدی افتخار احمد ولد میر اصغر ساکن اورکزئی حال جنگل خیل کومخالف فریق کے مسلح افراد اشفاق خان ولد تاج علی خان اور وقاص خان ولد واحد خان ساکنان محلہ سیدال خان جنگل خیل نے جیل سے نکلتے ہی مرکزی دروازے کے سامنے گولیاں مار کر موت کے گھاٹ اتار دیا۔واردات کے بعد ملزمان جائے وقوعہ سے فرار ہورہے تھے کہ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی کوئیک رسپانس فورس کے جوان ایچ سی تنویر عاصی کی قیادت میںفوری طور پر جائے وقوعہ پر پہنچ گئے اور تعاقب کے بعد دونوں ملزمان کو گرفتار کرکے انکے قبضے سے واردات میںاستعمال ہونیوالی دو پستولیں اور درجنوں کارتوس برآمد کرلئے ۔گرفتار ملزمان کو فوری طور پر تھانہ جرما منتقل کردیا گیا جہاں انکے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔خیال رہے کہ تین ماہ قبل مقتول افتخار احمد نے ملزمان کے رشتہ دار ثاقب خان ولد شعیب خان کو گائے چوری کرنے کے تنازعے پر فائرنگ کرکے قتل کیا تھا اور پولیس نے اسوقت واردات کے مرتکب ملزم افتخار کوموقع واردات سے گرفتار کرکے جیل بھیج دیا تھا جسے آج جیل سے ضمانت پر رہائی ملنے کے بعد موت کی نیند سلا دیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں