کوہاٹ: پی ٹی آئی ٹکٹوں پر ڈیڈلاک برقرار

کوہاٹ(نمائندہ خصوصی) پاکستان تحریک انصاف میں صوبائی اسمبلی کے امیدواروں کی نامزدگی پر ڈیڈلاک تاحال موجود ہے اور بنی گالہ میں ابھی تک دو حلقوں پر ٹکٹ کا فیصلہ نہ ہو سکا.

ذرائع کے مطابق ابھی تک پی کے 80 اور پی کے 82 پر بنی گالہ میں ڈیڈلاک برقرار ہے جس کے باعث پاکستان تحریک انصاف کی آفیشل ویب سائٹ پر جن امیدواروں کی فہرست جاری کی گئی ہے ان میں ان دونوں حلقوں کا ذکر نہیں ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ابھی تک دونوں حلقوں میں امیدواروں کے نام فائنل نہیں کیے گئے.
بے باک آواز کو ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ پی کے 80 میں پاکستان تحریک انصاف کے ضلعی صدر آفتاب عالم ایڈووکیٹ کو ٹکٹ نہ ملنے پر کارکنوں کی جانب سے شدید ردعمل دیکھنے کو ملا جبکہ پی کے 82 میں سابق گورنر سید افتخار حسین شاہ بھی ٹکٹ سے محروم رہے جس کے بعد انہوں نے آذاد حیثیت سے الیکشن میں‌حصہ لینے کا فیصلہ کیا جس پر پاکستان تحریک انصاف نے دونوں امیدواروں کے حوالے سے نظر ثانی کا فیصلہ کیا ہے.
یاد رہے کہ پی کے 82 سے سابق ایم پی اے ضیاءاللہ بنگش کو ٹکٹ دینے کا فیصلہ ہوا تھا تاہم ابھی پھر ان کی نامزدگی کا فیصلہ خطرے میں نظر آرہا ہے.
دوسری جانب محمد زئی قوم نے ایک گرینڈ جرگے میں فیصلہ کیا ہے کہ اگر ضیاء اللہ بنگش سے ٹکٹ واپس لیا گیا تو وہ آذاد حیثیت سے انتخابات میں حصہ لیں گے اور پوری قوم صرف اپنے امیدوار یعنی ضیاء اللہ بنگش کو ووٹ دے گی.
سیاسی ماہرین کے مطابق اگر واقعی ایسی صورتحال پیدا ہوتی ہے تو اس کا براہ راست فائدہ متحدہ مجلس عمل کے امیدوار سید قلب حسن کو جائے گا جوکہ پہلے ہی ایک مضبوط امیدوار کی صورت میں موجود ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں